افغانستان میں لاکھوں بچے اور بچیاں تعلیم کے بنیادی حق سے محروم 

 افغانستان میں لاکھوں بچے اور بچیاں تعلیم کے بنیادی حق سے محروم 

پشاور(خصوصی رپورٹ)دنیا کے بیشتر ممالک میں تعلیم کی اہمیت کو اجاگر کرنے کے سلسلے میں 8ستمبر کو عالمی یوم خواندگی اسلئے منایا جاتا ہے تاکہ تعلیم سے محروم لوگوں کو یہ حق دلوایا جاسکے ' تاہم افغانستان میں بھی اب بھی لاکھوں بچے اور بچیاں تعلیم کے حق سے محروم ہیں ' 

 

عالمی یوم خواندگی کے سلسلے میں بین الاقوامی سطح پر جشن اور تقاریب منعقد کئے جاتے ہیں ،

 

 ہر سال 8 ستمبر کو یوم  خواندگی منانے کا اعلان یونیسکو نے 26 اکتوبر 1966 کو جنرل کانفرنس کے 14ویں اجلاس میں کیا تھایہ پہلی بار 1967 میں منایا گیا تھا'

 

 افغانستان میں عالمی یوم خواندگی ہر سال پچھلے ادوار میں بیرونی جارحیتوں اور اندرونی جنگوں اور محاذ آرائی کے باوجود منایا جاتا تھا تاہم ایک سال قبل طالبان کے بر سر اقتدار انے کے بعد اب اس کے منانے میں خلل پڑ رہا ہے ' 

 

گزشتہ سال تو افغانستان کے طول و عرض میں تمام تعلیمی ادارے بند تھے جبکہ اس سال ملک بھر میں لڑکیوں کے مڈل سکو ل بھی بند ہے '  افغانستان میں تعلیم کی شرح دیگر ممالک کے مقابلے نمایاں طور پر کم ہے جس کے مطابق  افغانستان کی شرح خواندگی 38فیصد ہے، جب کہ بین الاقوامی اوسط 84 فیصد ہے۔