ریور راوی اربن پراجیکٹ کالعدم قرار

ریور راوی اربن پراجیکٹ کالعدم قرار

لاہور ہائیکورٹ نے راوی اربن پراجیکٹ کو کالعدم قرار دے دیا۔

 

لاہور ہائیکورٹ نے راوی اربن ڈویلپمنٹ پراجیکٹ کیخلاف درخواستوں پرفیصلہ سناتے ہوئے  پراجیکٹ کے خلاف درخواستیں منظور کر لی ہیں۔

 

عدالت نے پراجیکٹ کو کالعدم قرار دیتے ہوئے روڈا کے ترمیمی آرڈیننس کی دفعہ 4 کو بھی غیر قانونی اورآئین سے متصادم قرار دیا ہے۔

 

عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہےکہ راوی اربن ڈویلپمنٹ پراجیکٹ کا ماسٹر پلان بنیادی دستاویز ہے اور قانون کے تحت تمام اسکیمیں ماسٹر پلان کے ماتحت ہوتی ہیں لہٰذا ماسٹرپلان کے بغیربنائی گئی کوئی بھی اسکیم غیرقانونی ہوتی ہے۔

 

لاہور ہائیکورٹ نے کہا کہ روڈا ترمیمی آرڈیننس کی دفعہ 4 آئین کےآرٹیکل 144 اے سے متصادم ہے، روڈا کا ترمیمی آرڈیننس بھی آئین کے لوازمات پورے کرنے میں ناکام رہا ہے اور اس کا ترمیمی آرڈیننس آئین سے متصادم اور غیر قانونی ہے۔

 

عدالت کا کہنا تھا کہ  زرعی اراضی اس وقت لی جا سکتی ہے جب باقاعدہ ایک لیگل فریم ورک موجود ہو۔